ادبی نشست

ا یسے دور م یں جہاں اردو ادب بڑی ہی مشکلات کا سامنا کر رہا ہو ، اردو ادب کا بذر یعہ تعل یم استعمال کا رواج دن بدن کم ہوتا جا رہا ہو، جہاں ادب خود ادی بوں کے گھروں م یں اپنا پتہ پوچھتا پھر رہا ہو ا یسی کسم پرسی اور ما یوس کن صورتحال م یں “ا یریون یورس ٹی اسلام آباد” کی “مجلس اہل قلم” کی ز یرنگرانی “اد بی نشست” کا ق یام نہا یت خوش آئند اقدام ہے اور یہ محنت ا یک دن ضرور رنگ لائے گی اور اردو ادب کی تار یخ م یں ا یک سنگ میل ثابت ہوگی .
اد بی نشست”مجلس اہل قلم” کی شب و روز محنت کا ثمر ہے. مجلس اہل قلم ایک ایسا پلیٹ فارم ہے جہاں یونیورسٹی کے طلبہ و طالبات کو اپ نی قلمی صلا حیتوں کو نکھارنے کا موقع فراہم ک یا جاتا ہے۔ اد بی نشست کی کام یا بی مجلس اہل قلم کی کام یابی کا منہ بولتا ثبوت ہے اور یہ سلسلہ اللہ کے فضل و کرم سے یوں ہی جاری رہے گا ۔ اد بی نشست کا انعقاد 24 اکتوبر بروز جمعرات دن دو بجے ہوا۔ اد بی نشست کی صدارت وائس چانسلر ا یئر یو نیورسٹی اسلام آباد جناب “ا یئروائس مارشل فائز ام یر) ر یٹائرڈ( ” نے کی ۔ آپ نہا یت ادب شناس ہ یں اور ادب سے خاص لگاؤ رکھتے ہ یں۔
نشست کا آغاز کلام باری تعال ی سے ہوا۔ تلاوت کی سعادت “صدر مجلس اہل قلم سردار اسامہ صابر” نے حاصل کی ۔ اد بی نشست م یں شرکت کرنے والے طلبا ء کا جوش نہا یت د ید نی تھا ۔ تلاوت کلام پاک کے بعد شعراء نے اپنا اپنا کلام پیش ک یا۔ سامع ین نے شرکاء کو خوب داد سے نوازا جس سے انکی بہت حوصلہ افزا ئی ہو ئی ۔ الیکٹریکل ان جینئرنگ کی طالبہ نے بہت شاندار مقطع پڑھا جس پر سامع ین نے ان کی خوب حوصلہ افزا ئی کی

The participants of Adbi Nishst reciting poetry

جہاں نہ کرب دکھتا ہو، جہاں انسان بکتا ہو
وہاں اکثر ہی صورت پر کئی ا یمان ڈولے ہ یں

بی۔ بی۔اے طالب علم ذ یشان صد یقی نے “جوکر” کے کردار پر اپنا خاکہ پیش ک یا جسے
سامع ین م یں بڑی پذیرائی ملی۔ شعبہ انگر یزی کی طالبہ ارتقاء گل نے نہا یت شاندار غزل پڑھی جس کے چند اشعار کچھ یوں تھے

اس بھنور ز یست میں مقصد ح یات بھلا بیٹھے ہ یں کہاں ہونا چا ہیئے تھا اور ہم کہاں ب یٹھے ہیں
خون جگر سے ام یدوں کے چراغ جلنے چاہئے تھے ہم اپنے ہاتھوں اپنا ہی گھر جلا بیٹھے ہ یں

ان اشعار پر ہر طرف واہ! واہ! کی صدا ئ یں گونج اٹھ یں ۔ محفل م یں ہر شاعر ا یک سے بڑھ کر ا یک ثابت ہوا۔
نشست کے دوران سامع ین اور شرکاء کی تواضع NESCAFE
کی مشہور زما نہ کافی سے کی گئی جسے ہر ا یک نے خوب سراہا ۔ شرکاء م یں سب سے آخر م یں صدر مجلس اہل قلم سردار اسامہ صابر کو دعوت کلام دی گئی ۔ آپ کے کلام کی سامع ین نے بہت تعر یف کی۔ ان کے چند یادگار اشعار کچھ یوں ہیں

دل دھڑکنے کے سبب یاد تمھ یں آئ یں گے سبھی ہماری نسبت سے تمہیں لوگ بلا ئ یں گے کبھی

The audience enthralled as they savor the words recited by the talented poets of Air University.

سامع ین نے اس شعر پر انہ یں بہت داد دی۔ جب انہوں نے غزل کا اپنا پسند یدہ شعر پڑھا ،جو کے کچھ یوں ہے

جو لکھے جھو ٹی س یاہی سے ہم یں چاند راتوں م یں وہی خط ت یرے ہی آنگن م یں جلا ئ یں گے کبھی

تو ہر طرف سے مقرر مقرر کی آواز یں آنے لگ یں ۔ اساتذہ نے بھی اس شعر پر انکی دل کھول کر حوصلہ افزا ئی کی ۔
اس کے بعد اساتذہ کرام نے اپنا کلام پیش ک یا ۔ اساتذہ کرام م یں ڈاکٹر اختر عباس ،پروف یسر سلمان باسط اور انج ینئر عادل سع ید بھی شامل تھے۔ اساتذہ کے کلام نے طلبہ م یں اتحاد ، ایمان اور نظم کی روح پھونکی۔
نشست کے اختتام پر صدر محفل جناب وائس چانسلر ا ئ یر وائس مارشل فائز ام یر نے چند اشعار پڑھے اور شرکاء سے مختصر خطاب ک یا ۔ ان کا کہنا تھا ا یسی اد بی نشست کا ق یام نہا یت ہی خوش آئند ہے ۔ انہوں نے مجلس اہل قلم کی پوری ٹ یم کو مبارکباد پ یش کی اور اس سلسلے کو مز ید آگے بڑھانے کی تلق ین کی ۔
اختتام پر شعراء اساتذہ اور مجلس اہل قلم کی ٹ یم کے ساتھ فوٹ و س یشن ہوا اور یوں یہ ادبی نشست اختتام پذیر ہوئی ۔

By Muhammad Umar
Department of Mechatronics

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s