وجہءِ قتلِ اطفالَ الْعرب

یہ جو ہم روز سنتے ہیں کسی بچے کے مرنے کا
نتیجہ ہے قرآں کو چھوڑ کر باطلل پہ چلنے کا
.
عقل اب بھی اگر نہ آءے مغرب کے مریدوں کو
تو دعوہ چھوڑ دیں یہ سب نبی سے عشق کرنے کا
.
وہ تو ماریں گے بچوں کو ہمارے نیند میں آکر
کہ ہم سوءے جو ہیں پھر کیوں گلہ اس کام کرنے کا
.
شرم پھر بھی نہ آءے تو ذرا اس باپ سے پوچھو
کہ صدمہ کیسا ہوتا ہے ابن کو دفن کرنے کا
.
اور جن سے فیصلہ ہونا تھا اُمّت کے مقدر کا
انہیں کو فیصلہ ملتا ہے کم عمری میں مرنے کا
.
اُدھر پھولوں کی ہر سو ہے صفِ ماتم بچھی ہوئ
اِدھر ہے شور کسی حکمراں کو نا اہل کرنے کا
.
اِلٰہی اب ضرورت ہے کہ ہو اقبال پھر پیدا
جو ذمّہ لے سکے اُمّت کو پھر بیدار کرنے کا
.
قلم سے ہاتھ سے تلوار سے جیسے بھی ہو ممکن
ہمیں بدلہ ہے لینا طفل کے یوں قتل ہونے کا
.
اور اب ہم کو امن کے جھوٹے دعوے کو سمجھنا ہے
کہ قاتل تو وہی ہیں جو ہیں کہتے امن کرنے کا
.
ترابی^ وصفِ حسنِ یار پر لکھنا کرو تم ترک
ذرا سوچو قلم سے خون سے مقتل میں لڑنے کا

By Sardar Usama Sabir
Department of Mechatronics

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s